Genetics in everyday life Urdu (جینیٹکس ہماری عام زندگی میں)

جینیٹکس ہماری عام زندگی میں

جینیٹکس کیا ہے ؟


آپ نے کبھی یہ سوچا ہے کہ آپ اپنے ماں باپ جیسا  کیوں دکهتے ہیں. آپ کے بالوں کا رنگ کالا  یاسنہرا کیوں ہے؟

کیا آپ جانتے ہیں کے مجرم کو ڈی- این- اے  فنگر پرنٹنگ کے  استعمال کرنے سے پکڑا جا سکتا ہے؟ 

جینیٹکس ان سوالوں کا جواب دے سکتا  ہے


جینیٹکس کیا ہے؟

 

جینز کی جانکاری


جینیٹکس همیں یہ بتاتا ہے کہ ہماری صورت جیسا کے آنکھوں کا رنگ ایک پیڑی سے دوسری پیڑی تک کیسے اور کیوں جاتا ہے

کچھ بیماریاں ہمارے خاندانو میں کیسےچلتی ہیں؟

جینیٹک انفارمیشن دیکھ کرہم یہ معلم کرسکتےہیں کےڈی-این -اے کو ڈی-این -اے فنگرپرنٹنگ کےلئےکیسےاستعمال کیاجاتاہے؟

اور جینیٹکس همیں یہ بھی ہدکھاتاے کہ جانوروں, پودوں اور انسان  ميں فرق کیسے آتا ہے

 

یہ چهوٹی سی فلم آپ کو جینیٹکس  کے بارے ميں جانکاریھڑی بھی دے گی اور یہ بھی آپ کو پتہ چلے گا کہ جینیٹکس  ہمارے عام  زندگی  میں کتنےمعنی رکھتا ہے

 

جینیٹکس عام زندگی میں

 
جینیٹکس بہت سے طریقوں سے ہم پر اثر کرتا ہے.یہ چهوٹی سی فلم آپ کو جینیٹکس کے بارے ميںجانکاریھڑی بھی دے گی اور یہ بھی آپ کو پتہ چلےگا کہ جینیٹکس ہمارے عام  زندگی  میںکتنےمعنی رکھتا ہے

جینیٹکس کے ذریعے ہم یہ جان سکتےہیں کہ لوگوں کی شکل ویسی کیوں ہے اور کیوں صرف کچھ لوگوں کو خاص بیماریاں ہوتی ہيں

جینیٹکس کی تکنیکین جیسا کے پیرینٹل ٹیسٹنگ کے ذریعے ماہرین صحت جان سکتی ہيں کے بچوں میں پیدائش سے پہلے کون سی ی ہو سکتی  ہيں
جینیٹکس ٹیکنالوجی کے ذریعے خاص بیماری کے لیے خاص دوائی بنائی جا سکتی ہے  
محکمہں صحت کے علاوہ جینیٹکس کا استعمال اور اداروں میں بھی کیا جا سکتا  ہے جیسا کے پولیس جینیٹک فنگر پرنٹنگ کے ذریعے مجرم کو پکڑ سکتی ہے 

لیسٹر یونورسٹی کے سر آیلک جیفرےس نی ڈی- این- اے فنگر پرنٹنگ کو ۱۹۸۳ میں ایجاد کیا. اس ترکیب کے نریعے ہر آدمی کو اس کے ڈی- این- اے سے پهچانا جا سکتا ہے  

مجرم اکثر اپنی شناخت کے ثبوت پیچھے چھوڑ جاتے ہيں جیسا کے بال یا خون کے قطرے یا جلد کا خلیہ. آن چیزوں کے ذریعے پولیس یہ جان سکتی ہے کے مجرم وہاں موجود تها کے نہيں   

جینیٹکس کی معلومات بیگناہی کا ثبوت بھی دے سکتی ہے اور مجرم کو پہچاننےمیں اور جرم کے ثابت هہونے میں مدد بهی کر سکتی ہے 

کچھ خاص باتیں

 

جینیٹکس کوسمجه نے کے لیے ہمکو یہ جاننا  ضروری ہے کے سیل کروموسومز اور ڈی- این- اے کیا ہے 

 تمامزندہ چيزيں سیل سے بنی ہوتی ہیں.سیل زندگی کا بنیادی جزو ہے  

 انسان کے جسم میں لاکھوں کروڑوں سیل ہوتے ہیں. ایک عام انسان کے جسم میں تقريبا  کچھ١٠-١٠٠ کروڑو سیل ہوتے ہيں

ہر سیل اتنا چھوٹا ہے کے وه صرف ماءیکروسکوپ سے نظر اتا ہے. ہم اسے صرف آنکھ سے نہيں  دیکھ سکتے
سیل کی بہت سی اقسام ہوتی ہیں اور وہ سب مختلف کام کرتے ہیں.مثلا انسانی جسم ميں عظواتی سیل خون اور جلد کےہ سیل ہوتےہ ہيں

ایک سیل اندر سے کیسا ہوتا ہے؟ چلو دیکھیں 

نیوکلیس سیل کا سب سے اہم جزو ہے. یہ کنٹرول سنٹرکا کام کرتا ہے. یہ آپ کی ساری جینیاتی معلومات کروموسومز کی شکل میں محفوظ رکھتاہے

کروموسومز میں آپ کی ساری جانکاری ہيں مثلا آپ کے بال سيدھے ہيں يا گهنگهریالے آپ کا دل کیسے کام کرتاہے یہاں تک کے آپ کس ہاتھ سے لکھتےہیں.  

 کروموسومز کے ذریعے ہماری ساری جینیٹک جانکاری ایک جگہ ٹھیک سےرکھی جاتی ہے. یوں سمجھئے کے یہ فائل جیسا ہے

 کروموسومزڈی -این -اے سے بناہوا ہے یہ لمبےدھاگوں سے بناہوا ہے اور اس کا پور انام ڈیوکسیرائبونیوک لکایسڈ ہے
 ڈی- این- اے ٤ اينٹوں سے بنا ہوا ہے جن کا نام ہے ایڈانین, تهامین, سائٹوسین اور گوانین.آسانی کے لئے 
 کیتے ہيں A, T,C اور Gہم ان کو

ڈی- این- اے  ٢ دهاگوں سے بنا ہوا ہے جو ایک دووسرے سے جڑے ہيں جیسه کہ ایک گھومتی ہوئی سيڑھي. ہم اس 

سيڑھي ڈبل ہیلکس کے نام سے پکار تے ہيں

 ڈی -این -اے میں جو معلومات ہیں وو ہزاروں جینس میں شامل ہیں. ان جینس میں وہ ساری معلومات ہیں جسکی

وجہ سےآپ آپ ہو

وراثت

 

ایک پیڑی سے دوسری پیڑی تک ہماری عادتیں کیسے پهنچتی جا تے ہیں؟ ہماری شکل ہمارےادا پردادا کے جیسی کیوں ہیں؟

 ی جاننے کے لئے ہمیں وارثت کے بارے میں جاننا ضروری ہے
پھلے ہم کروموسومز پر دھیان دیں گے
آپ کے جسم کے ہر سیل میں ٤٦ کروموسومز ہیں.  یہ ٢٣ جوڑوں ميں ہيں
ہر ایک جوڑے میں ایک کروموسوم آپ کی مان سے اتا ہے  اور ایک آپ کے باپ سے. اس لیے آپ کے مان اور باپ 

 دونوں کا عکس آپ پر پڑتا ہے

 تخلیق کے وقت جب سپرم انڈے سے جڑتاہے تب باپ کے ٢٣ کروموسوممیں مان کے ٢٣ کروموسوم میں سے

 جاتے ہيں 

ہر کروموسوم کی جوڑی  دیکھنےمیں  ايک جیسی لگتی ہےسواے  تئیسویں جوڑی جو جنسی کروموسوم کے نام  سے جانے جاتے ہيں

دو جنسی کروموسوم ہوتے ہيں ايک X اور ایک Y

 

کرکروموسوم ہوتے ہيں X عورت کے پاس دو

کروموسوم ہوتا ہے X اور ایک Y مرد کے پاس ایک 

 

 

ایک مان ہمیشہ اپنا ایک X کروموسومم بچوں کو دےتی ہے، لیکن باپ X یا Y دے سکتا ہے

 

اگر باپ کی طرف سے Y کروموسومم آتا ہے، بچا لڑکا ہوگا.  اگر باپ اپنی طرف سے  X کروموسومم  دیتاے تو بچی لڑکی ہوگی

اس طرح ہونے ولا بچہ لڑکی یا لڑکا ہوگا قدرت باپ کی طرف سے ہوتا ہے

ہماری خصوصیات ہمارے جینیٹک میک اپ کی وجہ سے ہوتی ہيں اور ہوسکتا ہےکے یہ ایک جیںیا بہت ساری جینز کی وجہ سے هو
بہت سی خصوصیات جینیٹک اور ماحولی اثرات کی وجہ سے بھی هو سکتیہیں، جیسا غذایا ورزش

 

وراثت کے پٹرینز

 

وہ عادتیں جو ہمارے باپ دادا سے ملتی ہیں، ٣ طرف سے آسکتی ہيں

ریسیسسو آنهیریٹینس
ڈامینینٹ آنهیریٹینس
لنکڈ آنهیریٹینس Xاور

ہمارے پاس ہر جین کی دو  کاپیہوتی ہیں. ایک مان کی طرف سے اور ایک باپ کی طرف س سواے وه جو جنس کی ہوتی ہيں
کروموسوم کو ہم اسطرحددکھائیں گے اور جین کو ایک رنگین نقطےسے

 

image 1 for translation page

 

 

وه دو جین کی کاپی ایک جیسا ہو سکتی یا تهوڑی سی مختلف

ریسیسسو آنهیریٹینس میں ایک مخصوص کردار کے لئے آپ کے پاس وه جین چاهیےجن میں ایک جیسا فرق شامل ہو
البینسم ایک ریسیسسو بیماری ہے  جو نہ صرف انسان کو متاثر کرتی ہے بلکہ جانوروں کو بھی ہو سکتی ہے، جیسا کے چیتا
اس بیماری میں رنگ کم بنتا ہے، اس رنگ کا نام ملانن ہے.  اس حال میں دونوں جین صحيح کام نہيں کرتی
اب ہم آپ کو یہ دکھائیں گےکہ ریسیسسو آنهیریٹینس کیسے کام کرتا ہے. یہاں ماں اور باپ رونوں کے پاس وه جین ہے جو کام نهیں کرتے. یہ نیلے رنگ کہ نقطے سے ظاہر ہے
پر جب انکے پاس ایک صحيح اور ایک خراب جین ہے، انکو بیماری نھیں ہے، ان لوگوں کو ہم  کیریئر کے نام سے پکار تے ہيں
جب یہ دونوں اپنی جینز اپنے بچوں کو دےں گے تو کیا ہوگا ؟
ایسا بھی ہو سکتا ہے کے ان کی اولاد کے پاس رونوں کی اچھی جینز چلی جائیں، اور بچا صحيح
 سلام ت ہو گا اور اس کو بیماری نہ ہو گی
اگر وه جین جو ٹھيک سے نہيں کام کرتی رونوں ساتھ ملتی ہے تو اولاد کو بیماری ہو سکتی ہے
ایسا بھی ہو سکتاہے کے ایک صحيح اور ایک دوسری جین مل سکتی ہے. تب بچہ تو ٹھيک ہو گا، لیکن وه اپنی اولاد کو وه دوسری جین دے سکتا ہے
حمل کے دوران ان چاروں میں کوئی بهی حالت ہو سکتی ہے

 


ریسیسسو آنهیریٹینس کے اور بھی مثالیں ہیں، جیسا کانوں کا نا ہلنا، تهیلیسیمیا اور سیسٹک فبروسس
ڈامینینٹ آنهیریٹینس میں آپ کو صرف ایک جین جو ٹھیک سے کام نہیں کرتی ملنے سے بیماری ہو سکتی ہے 
ڈامینینٹ آنهیریٹینس کے کچھ مثالیں یہ ہيں: آنکھوں کا رنگ خاکی ہونا، بالوں کا رنگ کالا ہونا، هنٹنگٹن ڑیزیزآوٹ اور نسلی بریسٹ کینسر
مارفان سنڈروم ایک ایسا حال ہے جو ڈامینینٹ آنهیریٹینس کی وجہ سے ہوتا ہے.  اس حال میں لوگ عام آدمی سے لمبے ہوتے ہیں، اور ان کے دل، هڈیون اور آنکھوں کو کے مسئلے ہو سکتے ہيں

اب ہم آپ کو دکهائں گے کے ڈامینینٹ آنهیریٹینس کیسے کام کرتا ہيں.  یہاں باپ کو مارفان سنڈروم ہے  لیکن مان ٹھیک ہے

image 2 for translation page

 

 

اگر باپ کی خراب جین  بچے کو ملتے ہيں، بچے کو بھی مارفان سنڈروممیں ہو گا.  اگر مان باپ رونوں ں اپنے صحيح جین  دیںگے تو بچے اس بیماری سے متاثر نہيں هوں گے

 

 ہر حمل کے دوران ان چاروں میں سے کوئی بھي حالت ہو سکتی یے

 

 

X لنکڈ آنهیریٹینس X کروموسوم سے  جڑاہوا ہے جو کے جنسی کروموسوم میں سے ایک ہے

 

image 3 for translation page

 

 

جوکروموسوم سے جڑی ہی ہ .ا س بیماری میں خون ٹھیک سےجمتا نہیں ہے X هیموفیلیا ایک ایسی بیماری ہےجو

اب ہم  دیکھیں گے کے X لنکڈ ریسیسسوآنهیریٹینس کیسے کام  کرتا ہے.  یہاں مان کہ پاس ایک ٹھیک جین  ہے  اور ایک خراب جین ہے.  اسکو هیموفیلیا نھیںہے، لیکن وہ ایک کررئر ہے.  باپ کو هیموفیلیا نھیںہےہے  کیوں کہ اس کے پاس ٹھیک جین ہے
 

تب کیا ہوگا جب یہ مان باپ اپنے بچوں کو جینز پاس کریں گے؟

مان کی طرف سے اگر ٹھیک جین  آتی ہے - پھر اس کے بچے صحيح سلامت ت پیدا هوں گے
لیکن اگر مان کی طرف سے خراب جین اتی ہے یاتو اسکو ایک بیٹی پیدا ہوگی جو کریر ہے، یا اسکو بيٹا پیدا ہوگا جس کو ہیموفیلیا کی بیماری هوگی


ملکہ وکٹوریہ کا خاندان ایک ایسا مشہور خاندان ہے جس میں ہیموفیلیا شامل ہے.  ان کے پاس  خراب جین تھی اور ان ک بچوںاور پشتون میں یہ بیماری پهلے ہی تھی

 

X لنکڈ بیماری کی دوسری مثالیں کلر ابلائنڈنسسور فریجایل X سنڈروم  ہے 

 

جینیٹک حال

 

جینیٹک حالتوں کی بہت سی اقسام ہيں اور یہ جسم کے تمام حصوں کو متاثر کرسکتیں ہيں
تهیلیسیمیا ایک ریکسسو حال ہے جو خون پہ اثر کرتا ہے.اس حال میں لوگوں کا خون ٹھیک سے کام نھیں کرتا اور ان کا بدن ٹھیک سے آکسيجن نہيں لے پاتا

تهیلیسیمیا ہر نسل کے لوگوں کو متاثر کر سکتی ہے، لیکن یہ میڈیٹرینیں ملکوں کے لوگوں میں عام  ہے.  جیسا  کے جیسا کے اٹلی مالٹا انڑیا پاکستان مسرقی اور جنوب مشرقی ایشا کے لوگوں میں ہے

 
جینیٹکس کی اور ے سے ہم یہ سمجه سکتے ہيں کے تهیلیسیمیا خاندانوں میں کیسے  پهیل سکتی یے.  خون کے ٹیسٹ اور جینیٹک ٹیسٹ کےساتھ همیں یہ  پتہ چلسکتا ہے کہ کسسی کو تهیلیسیمیا ہے, یا اگر انکے بچوں کو ہونے  خطرہ کا ہے.  اس حلات کی وجہ جاننے سے ہم اس کا حل ڈهونڈه سکتیں ہيں
گورے لوگوں میں سیسٹک فبروسس سب سے عام  بیماری ہے 
وو سیل  جو ریشہ، پسینہ اور تھوک پیدا کرتے  ہيں اس بیماری سے متاثر ہیں.  یہ فضلے عام طور پر ہپتلےوتے ہیں.  لیکن سیسٹک فبروسسمیں یہموٹے اور چپکے ہوتے ہیں.  یہ پيپھڑےاور نظام ہاانہضامپا پھیپھڑےاہے  اور سانس لینےمیں مشکل پیدا کرتاہے 

آج کل کی جینیٹکس ان لوگوں کی مدد کر سکتیہےجن کو اپنے بچوں کو بیماری دینے کا خطرہ ہے.  اور ایسے ٹیسٹ موجود ہيں  جو بچوں کے پیدا ہونے سے پہلے بیماری کا پتا لگا سکتےہیں

کلینیکل جینیٹکس سروسز

اگر آپ کو کوئی پريشانی ہے جینیٹکس کے بارے میں، تو اپنے جی پی اورهسپتال ڈاکٹر سے بات کریں وه آپ کی مدد کر سکتے ہيں
یہ ایک ایسی سروسہے جوهسپتال کے ذریعے  ان لوگوں کی مدد کرسکتے ہيں  جو ان حالتوں سے گزر رہےہوںیاانکوخطرہہے.  وہاں کے لوگ آپ کی مدد اسکتےہیںور اگر ضرورت پڑےآپ کے ٹیسٹ کرا سکتے ہيں
ریفررل کی کئی وجہ هو سکتی ہيں ، جیسا  کے 
آپ کے خاندان میں بيماري پہلے سے ہے 
آپ کے خاندان میں کئی لوگوں کو کينسر ہے

بچے کی نشوونما میں رکاوٹ کی وجہ  بھی جینیٹکس ہو سکتی ہے
اور معلومات

امید ہے کے  یہ چهوٹی سی شروعات آپ کو اچھی لگی اور آپ کے کوئی کام آ سکے.  ہم امید  کرتے ہيں کہ اب آپ کو جینیٹکس کے بارے میں تهوڑی سی زيادہجانکاری ہے اور آپ کو یہ احساس ہوگا کے  ہمارے عام  زندگی میں جینیٹکس کیا معنی رکھتاہے  

 

This page was translated by Dr Aneela Majid

 

Share this page: